”آنکھیں تیز ، ہڈیاں مضبوط، موٹاپا اور کو لیسٹرول ختم“

تلوں میں دودھ سے زیادہ کیلشیم ہوتا ہے اور یہ پلانٹ پروٹین کا بہترین سورس ہے۔ جو لوگ تلوں کو اپنی زندگی کا حصہ بنا لیتے ہیں۔ وہ ستر سال کی عمر میں بھی نوجوانوں جیسی صحت اور طاقت کا مزہ لیتے ہیں ۔ اور لمبی زندگی پاتے ہیں۔ آپ کو تلوں کے فائدے اور درست استعمال کرنے کا طریقہ بتائیں گے۔ اورساتھ ساتھ تلوں کی مختلف رمیڈیز بھی بتائیں گے ۔ تل دو رنگوں میں ہوتے ہیں۔ سیاہ اور سفید۔ تلوں کا تیل بھی نکالا جاتا ہے۔ جسے میٹھا تیل کہتے ہیں۔ عرب اور ایشیا میں صدیوں سے تلوں کو خوراک اور دوا کے طور پر استعمال کیا جارہا ہے۔ تلوں میں اتنا پروٹین ہوتا ہے

آپ اس کو گ وشت کے متبادل استعمال کرسکتے ہیں۔ تلوں میں منرلنز ، وٹامنز ، پروٹین ، فائبرز اور فیٹی ایسڈز وافر مقدار میں پائے جاتے ہیں۔ دماغ اور اعصاب کی طاقت کےلیے تل بہت زیادہ مفید اور کارآمد ہیں۔ یہ حافظہ کو تیز کرتے ہیں۔ اعصاب کو مضبوط بناتے ہیں ۔ ہمارے دماغ کا بہت بڑا حصہ لیستین سے بنا ہے۔ تلوں میں وافر مقدار میں لیستین پایا جاتا ہے ہمارے دماغ کو درست طریقے سے کام کرنےکےلیے لیستین کی ضرورت ہوتی ہے۔ اگر ہمارے دماغ میں لیستین میں کی کمی ہوجائے۔ تو ہمارا دماغ او راعصاب کمزور ہوجاتے ہیں۔ دماغ کو طاقتور ، حافظہ کو تیزاور اعصاب کو تیزکرنےکےلیے یہ نسخہ نو ٹ کریں۔ دو بڑے چمچ سفید تلوں کے لے لیں۔

اس کو کسی بھی فرائی پین یا برتن میں ہلکاسا براؤن کرلیں۔ اور اس کو ٹھنڈا کرلیں ۔ ٹھنڈا کرنے کے بعد اس میں ایک چمچہ خشخاش کا شامل کرلیں۔ اور اس کو اچھی طرح سے مکس کرلیں۔ یا تو صبح ناشتہ کےبعد یا دوپہر کو کھانے کے بعد اس کو استعمال کریں۔ اس کو نیم گرم دودھ کے ساتھ کریں۔ انشاءاللہ! یہ نسخہ بہترین ہے۔ دماغی اور اعصابی طاقت کےلیے بہت ہی بہترین نسخہ ہے۔ اگر آپ تلوں کا استعمال کرتے ہیں۔ تویہ آپ کی آئی سائیٹ کےلیے بہت مفید ہے۔ انشاءاللہ ! باقاعدگی کے استعمال سے عینک اتر جائے گی۔ تل کیلشیم سے بھرپور ہوتے ہیں۔ جو شخص تلوں کو استعمال کرتا ہے ۔اس کی ہڈیاں کبھی کمزور نہیں ہوتے۔ دانت مضبوط رہتے ہیں۔ پٹھوں اور اعصاب کے لیے تل بہت اچھے ہیں۔

جن لوگوں میں کمر اور جوڑوں میں درد رہتا ہے۔ وہ تل استعمال کریں۔ اگر دو سے تین چمچے تلوں کے کھائیں گے ۔ انشاءاللہ! ا ن کی کمراور ہڈیوں کادرد اور جوڑوں کا درد جڑ سے ختم ہوجائےگا۔ یہ ہڈیوں کو مضبوط کرتا ہے۔ اس کے علاوہ کچھ لوگوں کو کمر کے نچلے حصے میں درد رہتا ہے۔ وہ باقاعدگی تلوں کا استعمال نیم گرم دودھ کے ساتھ استعما ل کریں ۔ تقریباً دو چمچے تل لے لیں۔ ہلکا سا براؤن کرلین۔ اور اس کو دودھ کے ساتھ کھایا جائے۔ توہڈیوں اور جوڑوں کے درد میں بہت مفید رہتے ہیں۔ جن لوگوں کے عمر سے پہلے بال سفید ہوجاتے ہیں۔ وہ تلوں کا تیل لگائیں ۔ یہ پنسار سے مل جائےگا۔ اس کے استعمال سے بال عمر سے پہلے سفید نہیں ہوں گے ۔ تل معدے کے لیے بہت مفید ہیں۔ یہ نہ صرف خود ہضم آور ہوتے ہیں۔ اگر روزانہ کی بنیاد پر تل کھارہے ہیں۔ یہ ایسے اینزائمز پیدا کرتے ہیں۔ جو دوسری غذاؤں کو ہضم کرنے میں بھی آپ کے معدے کی مدد کرتے ہیں۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.