باکسر محمد علی کے بیس مشہور اقوال میں سگر یٹ نہیں پیتا، لیکن ایک ماچس اپنی جیب میں ہروقت رکھتا ہوں اس لیے کہ

دوستی ایسی چیز نہیں جو آپ کسی تعلیمی ادارے میں سیکھیں ، بلکہ اگر آپ نے دوستی کے صیحح معنی نہیں سیکھے ، توآپ نے کچھ نہیں سیکھا۔ قومیں آپس میں جنگیں نقشوں میں تبدیلی لانے کےلیے لڑتی ہیں۔ لیکن غربت سے لڑی جانے والی جنگ زندگیوں میں تبدیلی لاتی ہے۔ زندگی بہت چھوٹی ہے ہم بہت جلدی بوڑھے ہوجاتے ہیں اور مرجاتے ہیں ۔ یہ ایک احمقانہ بات ہے کہ ہم لوگوں سے نفرت کرنے میں اپناوقت ضائع کردیتے ہیں۔ جو شخص خواب نہیں دیکھتا۔ وہ کبھی بھی اونچا نہیں اڑ سکتا ۔

جو شخس مشکلات کا سامنا کرنے کا حوصلہ نہیں رکھتا وہ بھی کچھ حاصل نہیں کرسکتا۔ کھانے میں کوئی زہر گھو ل دے تو اس کا علاج ہے مگر کان میں کوئی زہر گھول دے ، اس کا علاج نہیں۔ اگر کوئی انسان پچاس برس کی عمر میں بھی دنیا کو اسی طرح دیکھتا ہے جیسا کہ بیس سال کی عمر دیکتا تھا تو گویا اس نے زندگی سے تیس سال ضائع کردیئے۔ ہماری ایک ہی زندگی ہے۔ جو جلد ہی گذر جائے گی۔ خدا کے لیے ہم جو کچھ کرتے ہیں صرف وہ باقی رہے گا۔

میں نے زندگی میں بہت سی غلطیاں کیں، لیکن اگر میں اپنی زندگی میں کسی ایک شخص کی زندگی بھی بہتر کرنے میں کامیاب رہا تو میری زندگی رائیگاں نہیں گئی۔ کاش کہ لوگ دوسروں سے بھی ویسے ہی محبت کرتے جیسے وہ مجھ سے کرتے ہیں۔ اگر وہ ایسا کریں تو دنیا بہت خوبصورت ہوجائے گی ۔ اگر ہارا ہوا نسان ہارنے کے بعد بھی مسکر ادے ، تو جیتنے والااپنی جیت کی خوشی کھو دیتا ہے۔ جس میں خطر ہ مول لینے کی ہمت نہیں وہ زندگی میں کچھ بھی نہیں پاسکتا۔ محمد علی کہتا ہے کہ مجھے اپنی ٹریننگ کا ہر لمحہ برالگتا تھا ، لیکن میں نے سوچا کہ مجھے رکنا نہیں چاہیے۔

میں ابھی تکلیف اٹھاؤں گا تو ساری زندگی چیمپئن کہلاؤں گا۔ اگر تم مجھے ہرانے کا خواب بھی دیکھوں ، تو بہتر ہے کہ تم جاگ جاؤ اور اپنے اس خواب کی معافی مانگو۔ میں سگر یٹ نہیں پیتا لیکن ایک ماچس اپنی جیب میں ہر وقت رکھتا ہوں ۔ جب بھی میرا دل کسی گ ن گاہ کی طر ف مائل ہوتا ہے ، میں ماچس جلاتا ہوں اوراپنی ہتھیلی کو حرارت پہنچاتاہوں ، پھراپنے آپ سے کہتا ہوں : علی تم سے ایک ذرا سی حرارت برداشت نہیں ہوتی ہے پھر کس طرح تم دوزخ کی ناقابل برداشت تکلیف سہہ لوگے۔

ضمیر انسان کی اندر خدا کی پوشیدہ مگر واضح آواز ہے۔ اگر آپ کا دماغ اسے تصور کرسکتا ہے اور آپ کا دل اس پر یقین کرسکتا ہے تو آ پ اسے حاصل کرسکتے ہیں۔ نو بار گرنا اور دسویں باراٹھ کھڑے ہونا ، یہ کامیا بی ہے۔ میں آج تک ایسے کسی مضبوط شخص سے نہیں ملا، جس کا آسان ماضی ہو۔ سچائی ایسی دوا ہے جس کی لذت کڑوی ، مگر تاثیرشہد سے زیادہ میٹھی ہے۔ اگر آپ اچھا جواب نہیں سو چ سکتے ، تو خاموشی سونا ہے۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.