”نبی کر یم ﷺ کا فر مان ہے کہ ٹھنڈا پانی اللہ کی نعمت ہے۔ جبکہ ڈاکٹرز اسے نقصان دہ کہتے ہیں آخر کیوں؟“

سوشل میڈیا اکثر ایسی باتیں کر تا ہے جو کہیں پڑھی ہو تی ہیں اور نہ ہی کہیں سے سنی ہوئی ہو تی ہیں ۔

اور آج کل ان باتوں کو لوگ ایسے حرفِ آخر سمجھ لیتے ہیں کہ اللہ کی پناہ میں نے ایسے لوگ بھی دیکھے ہیں جہاں مختلف باتیں بہت ہی عام ہیں بہت سے لوگ ایسی بات کر جا تے ہیں کہ خدا کی پناہ ہمیں اس قسم کی باتوں سے بچنا چاہیے اور ہمیں کچھ ایسا کر نا چاہیے کہ ہم کو بھی ان باتوں سے گر یز کر نا پڑے۔ کہنےکا میرا مقصد ہے کہ ہمیں اُن باتوں سے بہت ہی زیادہ گریز کر نا چاہیے جو ہمیں نقصان دیتی ہیں۔

اگرچہ گرمی کے موسم میں ٹھنڈا پانی پیاس بجھانے کے ساتھ ساتھ راحت فراہم کرتا ہے تاہم ٹھنڈا پانی پینے والے افراد موسم کی تمیز کے بغیر اسے 12 مہینے استعمال کرتے ہیں اور وہ نہیں جانتے کہ جوٹھنڈا پانی وہ پی رہے ہیں وہ صحت کے لیے کس قدر نقصان دہ ہے۔عمومی طور پر لوگ گرمی سے بچنے کے لیے برف کا یخ ٹھنڈا پانی پینا پسند کرتے ہیں تاہم بعض افراد اس عادت سے بری طرح متاثر ہوتے ہیں کہ وہ سردیوں میں بھی ٹھنڈا پانی استعمال کرنا بند نہیں کرتے۔

ہیلتھ ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق ٹھنڈا پانی پینے کے نقصانات جوانی میں تو نظر نہیں آتے البتہ بڑھتی عمر کے ساتھ اس کے اثرات ضرور نمودار ہوتے ہیں جن سے محفوظ رہنا بہت مشکل ہوتا ہے۔ٹھنڈا پانی پینے سے فی الوقت پیاس تو بجھ جاتی ہے مگر اس کے صحت پر بہت برے اثرات پڑتے ہیں۔ٹھنڈا پانی استعمال کرنے سے معدے میں تیزابیت پیدا ہوتی ہے۔ٹھنڈے پانی کا آنتوں سے گزرنے کا عمل نہایت کٹھن اور دشوار ہوتا ہے جس کے باعث اندر کی آنتیں سوکھ جاتی ہیں اور قبض کی شکایت پیدا ہوتی ہے

اس کے برعکس گرم پانی آنتوں کو تر رکھتا ہے۔ٹھنڈا پانی نظام ہاضمہ کی خرابی کا سب سے بڑا سبب ہے، اس کے استعمال سے معدے کے مسائل بڑھ جاتے ہیں جو نظام ہاضمہ کو برے طریقے سے متاثر کرتے ہیں۔ٹھنڈا پانی پینے سے جسم کا درجہ حرارت کم ہوتا ہے جس کے باعث کیلوریز ختم نہیں ہوتیں اور پھر انسان کا وزن بڑھ جاتا ہے۔انسان کی ہڈیوں کے لیے ٹھنڈک بہت نقصان دہ ہے، ٹھنڈا پانی انسانی درجہ حرارت کو کم کردیتا ہے جس کی وجہ سے ہڈیوں کو ٹھنڈک ملتی ہے

اور پھر جوڑوں کے درد کی شکایت پیدا ہوتی ہےٹھنڈا پانی استعمال کرنے والے افراد کی آواز وقت سے پہلے تبدیل ہوجاتی ہے اور ان کو گلے کے درد کی شکایت بھی رہتی ہےٹھنڈا پانی پینے کے باعث پیدا ہونے والی مذکورہ بیماریوں کی نشاندہی تحقیق میں ہوئی، متعلقہ بیماریوں میں مبتلا افراد اپنے طبیب سے ضرو مشورہ کریں۔ تو ہمیں ان باتوں کو ضرور ذہن میں رکھنا چاہیے تا کہ ہم کل کو کسی بھی قسم کے نقصان سے بچ سکیں۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.