صبر سیکھ لیں۔ اللہ سب جانتا ہے۔

صبر سیکھ لیں۔ اللہ سب جانتا ہے وہ جانتا ہے کہ آپ کب، کن حالات سے گزرے ہیں۔یقین کر یں وقت بدل جا ئے گا کیونکہ تبدیلی کائنات کا اصول ہے۔ جہاں اپنوں کے لہجوں کی اپنا ئیت دم توڑ جا ئے تو پریشان اور رونے کی بجائے فاتحہ پڑھ کر بخشش کی دعا کر دیا کر یں بے شک اللہ سبحان و تعالیٰ صبر کرنے والوں کے ساتھ ہے۔ زندگی میں بعض اوقات کسی پریشانی کا ا نا آپ کو بہت سی پریشانیوں سے بچانے کے لیے ہو تا ہے۔ صبر اور نماز سے مدد لیا کرو بے شک اللہ صبر کرنے والوں کے ساتھ ہے۔ زندگی کی کتاب کے سب اوراق ہمارے مطابق نہیں ہو تے اگر کوئی ایسا ورق سامنے آ جا ئے جس میں راحتیں نہ ہوں تو صبر کر لینا چاہیے۔

جس شخص کو اللہ کے ہر کام میں حکمت سمجھ آ جا ئے وہ زندگی میں کسی بھی واقعے کے رونما ہونے پر شکوہ نہیں کر تا۔ دُکھ میں کبھی پچھتاوے کے آنسو مت بہاؤ بلکہ یہ سوچو کہ تم وہ خوش نصیب ہو جس کو اللہ نے آزمائش کے قابل سمجھا۔ جس مقام پر آ کر برداشت ختم ہو جا تی ہے اُسی مقام سے صبر شروع ہو تا ہے۔ ہم تکلیف کے جس مقام پر بھی ہوں ہم سے آ گے ضرور کچھ لوگ ہو تے ہیں انہیں دیکھ کر ہمیں شکر کی لاٹھی تھام لینی چاہیے تا کہ راستہ سہولت سے کٹ سکے۔ بے شک مشکل وقت بتا کر نہیں آ تا مگر سکھا کر اور سمجھا کر بہت کچھ جا تا ہے۔ انسان ہمیشہ تکلیف میں ہی سیکھتا ہے خوشی میں تو پچھلے سبق بھی بھول جا تے ہیں۔

زندگی کسی کی بھی آسان نہیں ہو تی زندگی کو آسان بنا یا جا تا ہے پیار سے ، خلوص سے اور برداشت سے۔ اگر آپ کے ساتھ نا انصافی اور زیادتی کی حد ہو جا ئے تو صرف اتنا سوچ کر خاموش ہو جا نا کہ جو ذات اوپر بیٹھی ہے وہ بہت بے نیاز ہے۔ ُ صبر ، خاموشی اور لا تعلقی بہترین انتقام ہیںٗ۔ صبر وقت مانگتا ہے اور وقت صبر مانگتا ہے۔ جب تجھ پر کوئی ایسی مشکل آ جا ئے جو تیرے بس سے با ہر ہو تو صبر کر اور اللہ کی طرف سے کشادگی کا انتظار کر۔ صبر کرنے والا کا میابی سے محروم نہیں رہتا چاہے اُسے طویل زمانہ لگ جا ئے۔ زندگی اس طرح بسر کر و کہ دیکھنے والے تمہارے درد پر افسوس کی بجائے تمہارے صبر پر رشک کر یں۔

اللہ تعالیٰ نے جو دیا ہے وہ اُسی کا ہے اور جو کچھ لیا ہے وہ بھی اُسی کا ہے اور ہر چیز کی مدت مقرر ہے بس صبر کرو۔ صبر کا دامن ہاتھ سے نہ چھوڑو۔ کیونکہ ہر کام آسان ہونے سے پہلے مشکل تھا۔ صبر سے رحمت کا انتظار کر جو چیز تیرے لیے ہے وہ تیرے لیے ہی ہے اور دیر صرف حکمت پر مبنی ہو تی ہے۔ صبر کے معنی یہ ہے کہ مشکل تو ہو لیکن وہ کسی سے بیان نہ کی جا ئے۔ صبر ایک ایسی سواری ہے جو اپنے سوار کو گرنے نہیں دیتی نہ کسی کے قدموں میں نہ کسی کی نظروں میں۔ دُکھ انسان کو یا تو ریت کی طرح ڈھا دیتا ہے یا پھر چٹان کی طرح کھر درا اور سخت بنا دیتا ہے۔

Sharing is caring!

Categories

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *