آپ بھی اپنی چکنی جلد سے پریشان ہیں یہ ٹو ٹکا آزمائیں

چکنی جلد سب سے زیادہ پریشان کرنے والی جلد کی دوسری قسم ہے ۔ اس جلد کی وجہ سے بہت مسائل پیدا ہوتے ہیں۔آئلی جلد کی پہچان یہ ہے کہ اکثر جلد پر دانے ہوتے ہیں اگر دانے نہ بھی ہوں تو بلیک ہیڈز یا ہلکے ہلکے سوراخ سے جلد کے اندرضرور نظر آئیں گے۔آپ کسی ٹشو کو منہ پر رکھ کر دبائیں ٹشو کے ساتھ آئل سا لگ جائے گا اس کا مطلب یہ ہے کہ یہ آئلی سکن ہے گرمیوں میں یہ جلد خاص طور پر زیادہ آئلی رہتی ہے جسے دیکھنے سے ہی منہ پر آئل نظر آتا ہے۔

وجہ:کچھ لوگوں کی جلد پیدائشی ہی آئلی ہوتی ہے مگر زیادہ تر لڑکیوں میں تیرہ اور چودہ سال کی عمر میں اس طرح کا مسئلہ پیدا ہوتا ہے ہارمونز کی تبدیلی سے بھی جلد چکنی ہوجاتی ہے پھر جب احتیاط نہیں کی جاتی تو اس جلد کے مسائل بڑھ کے دانوں کی شکل اختیار کر لیتے ہیں۔چکنی جلد کو ویسے سارا سال ہی مسائل کا سامنا رہتا ہے مگر گرمیوں میں خصوصاً اس جلد کو ہینڈل کرنا بہت مشکل ہے سب سے پہلے تیرہ چودہ سال کی عمر میں ہارمونز ایکٹیو ہو کر اس جلد کو متاثر کرتے ہیں اس پر دانے نمایاں ہونے لگتے ہیں کھلے مسام بھی اس جلد کے مسائل میں سے ایک ہے ان کھلے مساموں کے اندر جب دن بھر کی دھول مٹی یا پسینہ جاتا ہے تو انفکیشن ہونے کا سبب بنتا ہے۔پھر سب سے زیادہ مسئلہ اس وقت ہوتا ہے جب یہ انفیکشن بڑھ کر سارے چہرے پر آجاتا ہے اور اپنے نشان چھوڑ جاتا ہے چکنی چیزیں اور کھٹی چیزیں کھانے سے بھی چکنائی زیادہ ہوجاتی ہے بہت زیادہ دھوپ اور گرمی جلد کو بہت خراب کر دیتی ہے۔

چکنی جلد کے لئے حفاظتی اقدامات:جن لوگوں کی جلد تیرہ چودہ سال کی عمر سے چکنی ہوجائے اور مسائل پیدا ہونے لگیں اور اگر وہ اسی وقت احتیاط کرنا شروع کردیں تو پھر اس جلد کے مسائل پر قابو پایا جاسکتا ہے اس حوالے سے ہم آپ کو چند تدابیر بتاتے ہیں۔اگر ایکنی شروع ہوجائے تو سب سے اہم احتیاط جلد کو ایکنی سے پاک کرنا ہے اور اس کے لئے ضروری ہے روزانہ دو ٹائم کسی بھی اچھے ٹونر سے چہرے کو صاف کریں۔دھوپ سے اس جلد کو کو بچانے کیلئے سن بلاک استعمال کریں۔زیادہ تر ایکنی صابن استعمال کریں۔دن میں کم از کم آٹھ سے دس گلاس پانی پائیں اگر پانی میں لیموں نچوڑ کر پیئیں تو بہت فائدہ ہوگا۔کم از کم چار سے پانچ مرتبہ منہ دھوئیں خاص طور پر صبح اور سونے سے پہلے۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.