سسر حیسے باپ کو غسل دینے کے لیے خانہ کعبہ سے پانی منگوایا ۔۔ لوگوں کے طعنےسہنے والی ان مشہور شخصیات کے مشکل ترین لمحات

سوشل میڈیا پر مشہور شخصیات کے چند جذباتی لمحات سب کو افسردہ کر دیتے ہیں۔ کچھ کے آخری وقت کے لمحات سب کو جذباتی کر دیتے ہیں تو کوئی اپنے سے بڑھ کر دوسروں کے لیے سب کچھ دے جاتا ہے۔

اس خبر میں آپ کو اسی حوالے سے بتائیں گے۔

عامر لیاقت حسین:
عامر لیاقت حسین کا شمار مشہور و معروف میزبانوں میں ہوتا تھا، تاہم دلچسپ بات یہ بھی ہے کہ عامر لیاقت حسین اپنی فیملی سے بے حد پیار کرتے تھے۔

عامر کی محبت کا انداز اس بات سے لگایا جا سکتا ہے کہ والد کی جگہ سمجھنے والے عامر نے اپنے سُسر کو غُسل خانہ کعبہ کے پانی سے دیا تھا، عامر نے بتایا کہ جس پانی سے خانہ کعبہ کو غسل دیا گیا تھا، میں وہاں گیا تھا اور وہ پانی ساتھ لایا تھا، اس طرح سُسر کو خانہ کعبہ کے پانی سے غسل دیا گیا۔

ارشد شریف:
شہید ارشد شریف کے جنازے نے جہاں سب کی توجہ حاصل کی وہیں ان کی شخصیت بھی سب کو حیران کرتی تھی۔ آخری دنوں میں بھی ارشد شریف اپنے چاہنے والوں کو مایوس نہیں کر رہے تھے۔

پاکستانی قوم کی آواز کے طور پر سامنے آنے والے ارشد شریف نے نہ صرف نواز شریف بلکہ عمران خان پر بھی تنقید کی اور پاکستان سے اپنی محبت واضح کیا۔

اس مٹی کی حفاظت اپنے قلم سے کرتے کرتے ارشد شریف اس دنیا سے چلے گئے، لیکن ان کی دردناک شہادت اور اس سے پہلے اُن پر کیے جانے والے ظلم نے سب کو افسردہ ضرور کر دیا ہے۔

ہمایوں سعید:
مشہور پاکستانی اداکار ہمایوں سعید نے پاکستانی شوبز دنیا میں اپنی اہمیت اور انفرادیت کو خوب اجاگر کیا ہے اور واضح کیا ہے کہ ایسے اداکار بہت کم پیدا ہوتے ہیں۔

پاکستانی فلموں اور ڈراموں میں اداکاری کے جوہر دکھانے والے ہمایوں سیعد اب نیٹ فلکس پر لیڈی ڈیانا پر بننے والی فلم کا حصہ ہیں۔ تاہم ان سے متعلق ان کے چاہنے والے اُس وقت افسردہ ضرور ہو جاتے ہیں، کیونکہ ہمایوں سعید کی شادی کے کئی سال بعد بھی ان کی کوئی اولاد نہیں ہے۔

اولاد نہ ہونے کے باوجود ہمایوں سعید ان تمام بے اولاد جوڑوں کے لیے ایک مثال ضرور ہیں، کیونکہ ہمایوں ہر حال میں اللہ کا شکر ادا ضرور کرتے ہیں۔

بابر اعظم:
بابر اعظم ان دنوں کافی چرچہ میں ہیں، تاہم بہت سے لوگ بابر اعظم اور ان کے والد کی محبت کو دیکھ کر متوجہ ضرور ہو جاتے ہیں۔

قومی کرکٹ ٹیم کے کپتان کے والد نے بیٹے کی پڑھائی اور کرکٹ کے شوق دونوں کو برقرار رکھنے میں خوب مدد کی اور بیٹے کے حوصلے کو پست نہیں ہونے دیا۔ عام طور پر ایک باپ اپنے خواب مار کر اپنے بچے کے خوابوں کو پورا کرتا ہے، بابر اعظم کے والد کی آنکھوں میں بھی بیٹے کے خوابوں نے جگہ بنا لی ہے، اب ان کا ارمان یہی ہے کہ میرے بیٹے کا خواب پورا ہو۔

اسی احساس کو بابر نے بھی خوب سمجھا اور اپنے والد کو اپنے دور نہیں ہونے دیتے ہیں، ہر مقابلے میں والد کو نہ دیکھ لیں تو کام کی شروعات نہیں کرتے ہیں۔

Sharing is caring!

Comments are closed.