اولاد کے لیے 3 بار یہ کلمات پڑھ کر دعاکریں

یہ دعا بخت لگانے والی کامیاب دعا ہے ۔ حضرت احمد لاہوری ؒ بہت بڑے اللہ والے گزرے ہیں ان کے بیٹے مولانا حبیب جو سعودی عرب میں رہتے تھے وہ اپنے والد کی بالکل کاپی تھے اور ان کے بارے میں مشہور تھا کہ یہ تھرما میٹر ہیں ۔یعنی ح رام و حلال ایک پل میں بتادیتے ہیں۔ کسی نے حضرت لاہوری ؒ سے پوچھا کہ حضرت! آپ کی اولاد نیک درویش ہے

اس کی کیا وجہ ہے ؟ فرمایا: حلال کھلایا اور ہرنماز کی التحیات میں ” رب اجعلنی ” کے بعد یہ دعا پڑھی ۔ وہ دعا” ربنا ھب لنا من ازواجنا وذریتنا قرۃ اعین واجعلنا للمتقین اماما” ہے۔ یہ دعا سورت الفرقان کی آیت نمبر چوہتر ہے۔ یہ دعا جس کو یقین کے ساتھ پڑھیں کہ مولا ! اگر میرے بیٹے ، بیٹی یامیرے گھر میں کسی فردپر کوئی آفت آئے۔ یا کوئی پریشانی ، آزمائش آئے ۔ اللہ میری آنکھوں کو ٹھنڈک نہ پہنچی تو مولا ! ایسا فرمادے کہ آنکھوں کو ٹھنڈ ک پہنچادے ۔ کبھی ایسا ہو اکہ ہمیشہ مزدو کو مزدوری پہلے ملتی ہے یا آخر میں ملتی ہے۔ اور التحیات میں یہ آخری لمحہ ہوتا ہے عبادت کا ۔ اللہ تعالیٰ نے یہ فرمایا : اب التحیات میں بیٹھا ہے یوں سلام پھیرے گا۔ اور اس کا مجھ سے گفتگو کاجو سلسلہ ہے۔ وہ ختم ہوجائےگا۔ یہ دنیا میں گم ہوجائےگا۔ یا کسی کام میں گم ہوجائےگا۔ چلو اس کو مزدوری دیدو۔ یہ التحیات آخری لمحہ ہے مزدوری پانے کا کتنا بڑا نقظہ ہے۔

التحیات میں دعاؤں کا اہتمام کیا کریں۔ دعا ؤں سے آنکھیں ٹھنڈک ہوتی ہیں۔ یہ دعا سے نسلوں میں صلاحیت پیدا ہوتی ہے۔ اور اللہ غیب کے خزانوں سے صالح اورصلاحیت پیدا کردیتا ہے اورایمان پیدا کردیتا ہے اور نسلوں میں اللہ تعالیٰ ایسی نعمت دیتا ہے کہ نسلیں زندگی کے مسائل میں اٹکتی نہیں ، کھٹکتی نہیں اور دلوں میں کھٹکتی نہیں ۔ کیوں؟ اللہ نے دعا میں وعدہ کیا ہے کہ میں تمہارے بیوی او راولادوں کو تمہارے لیے ٹھنڈک بناؤں گا۔ ٹھنڈک کس وقت بنے گی؟ جب یہ مسائل نہیں ہوں گے۔ حضرت لاہوری ؒ نے مزید فرمایا : میرے پاس کئی کیس ایسے ہیں۔ میاں بیوی ازدواجی زندگی میں مسائل ہیں ۔ محبت کی کمی ہے ۔ یا ان کی شکایت تھی۔ آپ یہ عمل اولاد کے لیے بھی کریں ۔التحیات کے بعد یہ جو آیت ہے ” ربنا ھب لنا من ازواجنا وذریتنا قرۃ اعین واجعلنا للمتقین اماما” پڑھیں ۔نماز میں معمول بنا لیں۔

نہ صرف آپ کی ازدواجی زندگی کی شکایات دور ہوں گی ۔ تلخیاں محبت میں تبدیل ہوں گی۔ اس دعا میں یہ بھی تاثیر ہے۔ انوکھی تاثیر ہے۔ میرے استاد فرمانے لگے کہ ہر نماز کے بعد اس دعا کااہتمام کرو۔اور کثرت سے پڑھو۔ اور جب پڑھا تو ازدواجی زندگی کی شکایت دور ہوگئی۔ تلخیاں محبت میں تبدیل ہوگئیں

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.