جوڑوں کے درد سے آپ کے ماں باپ پریشان ہیں اور تکلیف میں ہیں

متعدد طبی تحقیں، رپورٹس مںں یہ بات سامنے آچکی ہے کہ ادرک کے اندر ایی خاصت ہوتی ہے جو جوڑوں کے درد کے لے استعمال کی جانے والی ادویات کا اثر بڑھا دییق ہے۔ مگر ادویات کے بغرت بھی یہ کافی مفد ثابت ہوتی ہے، اس کے لے ادرک کو پسا کر سفوف کی شکل مںف استعمال کریں یا اس کے باریک ٹکڑے کرکے اسے چائے کے لےج ابالے جانے والے

پانی مںت 15 منٹ تک ڈبو کر رکھںد، اس کا مستقل استعمال جوڑوں کے درد مںا کمی لانے کے لے بہترین ثابت ہوگا۔اگر جوڑوں کے شکار ہںف تو فاسٹ ، جنک اور تلی ہوئی غذاﺅں کو ترک کردیں۔جوڑوں کے مرض کے شکار مریضوں پر کی جانے والی ایک سوئڈیش تحققس کے مطابق جن لوگون نے مچھلی، تازہ پھلوں و سبزیوں، گندم یا دیگر اجناس، زیون کے تلو، نٹس، ادرک لہسن وغرلہ پر مشتمل خوراک کو اپنی عادت بنالای، انہں جوڑوں کی سوجن کا کم سامنا ہوا اور ان کی جسمانی صحت مںا کافی حد تک بہتری آئی۔ ایک کورین تحقق مںے یہ بات سامنے آئی ہے کہ جوڑوں کے درد مںر مبتلا افراد کی تکلفں مںد اس وقت کمی آگئی جب انہںو مختلف اقسام کے مصالحوں کی خوشبو سونگھائی گئی جن مںی کالی مرچ، گرم مصالحہ اور دیگر شامل تھے۔اگر تو کسی کے ہاتھوں کے جوڑوں مںب تکلفک ہے تو یہ سننے مںن تو عجبو لگے گا مگر ہر باورچی خانے مںا کےل جانے والا یہ عام سا کام درحققتں اس تکلفم مں،

کمی لانے کا باعث بنتا ہے۔ سب سے پہلے تو اپنے ہاتھ گرم پانی مںر کچھ دیر کے لےد ڈبو دیںتاکہ پٹھوں اور جوڑوں کو سکون ملے اور ان کی اکڑن کم ہو۔ اس کے بعد برتن دھولںگ۔آپ کو اس کے لے دو پلاسٹک کے ڈبوں کی ضرورت ہوگی، ایک مںو ٹھنڈا پانی اور کچھ آئس کوببس بھردیں جبکہ دوسرے مںح ایسا گرم پانی ہو جس کا درجہ حرارت آپ چھونے پر برداشت کرسکںک۔ پہلے اپنے تکلفب دہ جوڑوں ٹھنڈے پانی والے ڈبے مںپ ایک منٹ کے لےہ ڈبو دیں اور اس کے بعد 30 سکنڈ تک گرم پانی والے ڈبے مں متاثرہ جگہ کو ڈبو دیں۔ اسی طرح ڈبوں کو پندرہ منٹ تک بدلتے رہںٹ، مگر ہر ڈبے مں تسڑ سکنڈ تک ہی متاثرہ جگہ کو ڈبوئںپ تاہم آخر مںپ اس کا اختتام ایک منٹ تک ٹھنڈے پانی والے ڈبے مںع تکلفس مںڈ مبتلا جگہ کو ڈبو کر کریں۔امریکا کی ایک یونوورسٹی کی تحققت کے مطابق روزانہ چار کپ سبز چائے کا استعمال سے جسم مں ایسے ککلز کی مقدار بڑھ جاتی ہے جو جوڑوں کے درد مںا مبتلا ہونے کا امکان کم کردیتے ہں

۔ ایک اور تحققں کے مطابق سبز چائے مںک موجود پولی فنوڑل نامی اییٹی آکسائڈمنٹس سوجن مںک کمی لانے کی صلاحتو رکھتے ہںکہ جس سے پٹھوں مںز آنے والی توڑ پھوڑ اور درد مںک نمایاں کمی آتی ہے۔ یہ زرد مصالحہ اپنے اندر درد کش خوبایں رکھتا ہے۔ متعدد طبی تحقی م رپورٹس کے مطابق ہلدی کا استعمال جوڑوں کے مریضوں کی تکلفآ اور سوجن مںس کمی لاتا ہے۔ ایک تحققد مںق گھٹوں کے جوڑوں کے درد کے شکار مریضوں کو روزانہ 2 گرام یا ایک چائے کا چمچ ہلدی استعمال کرائی گئی جس کے نتجے مں ان کی تکلفک مںو کی آئی اور جسمانی سرگرموسں مںا اتنا اضافہ ہوا جو اس مرض کے لے ادویات کے استعمال پر ہوتا ہے۔ ہلدی کا آدھا چائے کا چمچ چاول یا سبزیوں پر روزانہ چھڑک دیں یا ایسے ہی پانی کے ساتھ نگل لںو۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.