”چنڈی کا ہمیشہ کے لیے خاتمہ ۔ ہاتھوں اور پاؤں کی انگلیوں کو اذیت سے بچانے کا علاج۔“

ھاتھ اور پاؤں کی چنڈی کا آسان ترین علاج جس کو بھی چنڈی ہوتی ہے بہت زیادہ تکلیف اٹھاتا ہے پاؤں تک زمین پر نہیں رکھا جاسکتا آسان ترین علاج بتا رہا ہوں ان شاءاللہ تین سے چار دنوں میں مکمل ٹھیک ہو جائے گا جسم کے جس بھی حصے پر چنڈی ہو اس کو کسی نوکدار چیز یعنی ھاتھ سے کپڑے سینے والی سوی سے اچھی طرح کریدیں تاکہ اس کی جڑیں بالکل سامنے نظر آنا شروع ہو جائیں

اب اس جگہ پر ایک قطرہ دیسی اک یعنی شیر مدار کا ڈال دیں اور تین سے چار دن روانہ ایسا ہی کریں ان شاءاللہ چنڈی کی جڑیں بھی ختم ہو جائیں گی نوٹ اگر ضرورت پڑے تو مزید بھی چند دن ایسا ہی کیا جا سکتا ہے۔یاد رکھیں شیر مدار) یعنی اک کے دودھ کے بیرونی استعمال میں کسی بھی قسم کا کوئی خطرہ نہیں ہے۔ پیروں کے نچلے حصے پر جلد میں چنڈیاں بن گئی تھیں۔ پیروں پر دباؤ نہیں ڈالا جا رہا تھا جس کی وجہ سے وہ چل پھر نہیں سکتی تھی۔ وہ آپریشن کروا چکے تھے لیکن خاطر خواہ فائدہ نہیں ہوا اور تھوڑے دن بعد چنڈیاں واپس آ گئیں۔ ابتدائی معلومات پر انحصار کرتے ہوئے ڈسکشن کے بغیر ہومیوپیتھک دوا دی گئی جو کہ اچھا فیصلہ نہ تھا۔مزاج کو سمجھے بغیر تفصیلات کی عدم موجودگی میں صرف بیماری کے نام کے مطابق دوا تجویز کی گئی۔ اس لیے مریض کو کوئی خاص افاقہ نہ ہوا۔مناسب تشخیص کے لیے کیس ڈسکشن بہت اہمیت کی حامل ہوتی ہےتفصیلی انٹرویو سے مرض کی تہہ تک پہنچا جا سکتا ہے۔

صحت کے معاملات کو ذمہ داری سے دیکھا اور سمجھا جاتا ہے۔ پھر صحیح دوا، پوٹینسی اور خوراک کا انتخاب مریض کے لیے فائدہ مند ثابت ہوتا ہے۔ بیماری کے نام پر تجویز کی گئی دوا صرف دوا ہو گی علاج نہیں۔ اس کیس میں بھی ایسا ہی ہوا۔ انتہائی ناقابل برداشت حد تک تکلیف دہ مینسز بہت زیادہ بلیڈنگ اور شدید حساسیت نے شخصیت پر گہرے اثرات مرتب کر رکھے تھے۔ مزاج میں جذباتی پن اور دوسروں سے وابستگی بہت نمایاں تھی۔ برتاؤ میں شائستگی اور ملنساری چھلکتی تھی۔ کوئی ناراض ہو جائے تو رو پڑتی تھی مگر تسلی دینے سے مطمئن ہو جاتی تھی۔گھومنے پھرنے کی شوقین تھی لیکن کرونا کی وجہ سے گھر تک محدود تھی اور اس وجہ سے کافی ڈسٹرب تھی ور کو ناپسند کرتی تھی۔ فاسٹ فوڈ، کیچپ، چٹنیاں اور نمکین کھانوں کی طرف طبیعت مائل تھی۔ ٹھنڈے میٹھے کی شدید طلب رہتی تھی۔یہ واضح طور پر ہومیوپیتھک دوا فاسفورس کا کیس تھا۔ صورت حال کے مطابق پوٹینسی کا انتخاب کیا گیا

اور دوا فاسفورس تجویز کی۔ دوا نے واضح فائدہ دیا۔ اللہ کے فضل و کرم سے دس دن میں جلد سے چنڈیاں ایسے مکمل غائب ہو گئیں جیسے کبھی وہاں تھی ہی نہیں۔ باقی تمام معاملات میں بھی نمایاں بہتری نظر آئی

Sharing is caring!

Comments are closed.