مرد کون سی عورت کو کبھی نہیں بھول پا تا؟

نکاح پہ جب پو چھا گیا اس کی خوشی کا تو کہنے لگی ماں با با بہت خوش ہیں میرے آج کل کے معاشرے میں عورت کی بہترین محافط بد صورتی ہے۔ عورت کو خوبصورت کہو وہ خوبصورت ہوتی چلی جا ئے گی اچھا کہو وہ اچھی ہو تی چلی جا ئے گی گھر کا خیال رکھنے والی ہنس کر ق ر بانی دینے والی کہتے جا ؤ وہ ویسی بنتی جا ئے گی مگر جب اسکی چھوٹی غلطی کو بڑی بناتے ہو اس کے روزمرہ کاموں میں عیب نکالتے ہو تو تم اسے دن بدن عیب دار کر ے چلے جا تے ہو۔ ایسی کوئی عورت نہیں ہے جو اُن آدمیوں کے نام یاد نہیں رکھتی جو اُسے پیار کر تے تھے اُسے موصول ہونے والے محبت کے خطوط کی تعداد سے لے کر اُسے دئیے گئے پھولوں کے رنگ تک یاد رہتے ہیں۔ جب کوئی عورت یہ کہتی ہے۔

نا کہ دنیا کے سب مرد ایک جیسے ہو تے ہیں اس کا مطلب یہ نہیں ہو تا کہ وہ دنیا کے سارے مردوں کو آزما چکی ہے اسکا مطلب یہ ہو تا ہے کہ جس کو اس نے آزما یا تھا۔۔ وہ اسکی ساری دنیا تھا۔ جن گھروں میں عورتیں خاومش اور مرد فیصلے کر تے ہیں ان گھروں میں بر کتیں راج کر تی ہیں۔ اور ہم جیسے لوگوں پر لوگوں کو بس ترس آ تا ہے محبت نہیں۔ پوری زندگی میں کوئی ایک شخص بھی ایسا ہو کہ جو آپ کے دکھ پر دکھی اور خوشی پر خوش ہو تا ہو تو یقین کیجئے کہ وہ ایک ہی کافی ہے۔ جب ہم بڑے ہو جا تے ہیں تو پنسل کی جگہ پین اس لیے دیا جا تا ہے تا کہ ہم سمجھ جا ئیں کہ اب ہماری غلطیاں مٹا نا آسان نہیں۔

پاکیزہ ترین محبت یہ ہے کہ تم کسی شخص سے محبت کر و یہ جا نتے ہوئے بھی کہ وہ تمہارا نہیں ہو سکتا اور اسے خوش دیکھنے کی تمنا کرو۔ مجھے شدید نفرت ہے ایسے لوگوں سے جو دو دن تو جہ دے کر تیسرے دن منہ موڑ لیتے ہیں اس لیے تو کہتے ہیں انسان بھی گر گٹ کی طرح رنگ بدلنے میں دیر نہیں کر تا۔ اتنی تکلیف کبھی نہیں ہو تی جتنی یہ جان کر ہو تی ہے کہ ہم نے اپنا وقت ، پیار، چاہت اور زندگی غلط انسان اور غلط جگہ ضائع کی۔ مرد کو جتنی بھی ، خوبصورت اور وفادار بیوی کیوں نہ مل جا ئے مگر اپنی پہلی محبت کو کبھی نہیں بھو لتا۔

سول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:عورت پانچ وقت کی نماز پڑھتی رہے، وہ رمضان کے روزے رکھ لیا کرے اور اپنی آبرو کی حفاظت رکھے اور اپنے خاوند کی تابعداری کرے تو ایسی عورت جنت میں جس دروازے سے چاہے داخل ہوجائے رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم سے ایک شخص نے عرض کیا:یارسول اللہ!فلانی عورت کثرت سے نفل نمازیں اور روزے اور خیر خیرات کرتی ہے لیکن زبان سے پڑوسیوں کو تکالیف بھی پہنچاتی ہے۔ آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا: وہ دوزخ میں جائے گی۔ پھر اس شخص نے عرض کیا کہ فلانی عورت نفل نمازیں اور روزے اور خیرات کچھ زیادہ نہیں کرتی،یوں ہی کچھ پنیر کے ٹکڑے دے دلادیتی ہے لیکن زبان سے پڑوسیوں کو تکلیف نہیں دیتی۔ آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا: وہ جنت میں جائے گی۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.