غم اور پریشانی زندگی میں اس لیے آتے ہیں کہ ایسے الفاظ جو دل کو سکون دیں

غم اور پریشانی دراصل انسانی فیصلے اور اللہ تعالیٰ کے حکم کے درمیان فرق کا نام ہے ۔انسان پر کبھی راست بند نہیں ہوتا ، ہر دیوار کے اندر دروازہ ہے ، جس میں سے مسافر گزرتے رہتے ہیں۔وہ شخص مرگیا جو کسی کے دل میں نہ رہا آدمی کب مرتا ہے جب دل سے اُترتا ہے زندہ کب ہوتا ہے جب دل میں اترتا ہے ۔کسی انسان کے کم ظرف ہونے کیئے اتنا ہی کافی ہے کہ وہ اپنی زبان سے اپنی تعریف کرنے پر مجبور ہوجائے ۔اس سے پہلے کہ ہم سے بہت کچھ چھن جائے ۔ ہمیں بہت کچھ چھوڑ دینا چاہیے ۔

عبادتیں ان کا تقدس اور اہمیت اپنی جگہ لیکن کسی انسان کا دل راضی کرنا سب اہمیتوں سے زیاد ہ اہم ہے ۔انسان سے محبت وہی کرسکتا ہے جس پر خدا مہربان ہواللہ کے محبوب اور اللہ کے ولی کسی سے ایک دفعہ تعلق قائم کرنے کے بعد اس تعلق تو توڑتے نہیں بازو پکڑنے کی لاج رکھتے ہیں۔ہر وہ آدمی جو ضرورتوں کے وقت محبتوں کو ترک کردیتا ہے ۔ وہ آدمی کبھی وفاداری نہیں پائیگا ۔اینٹ کا اینٹ سے ربط ختم ہوجائے تو دیواریں اپنے ہی بوجھ سے گرنا شروع ہوجاتی ہیں۔

کشتی ہچکولے کھارہی ہو تو اللہ کی رحمت کو پکارا جاتا ہے جب کشتی کنارے لگ جائے تو اپنے زور بازو کے قصیدے پڑھے جاتے ہیں بہت کم انسان ایسے ہیں جو اپنے حاصل کو رحمت پروردگار کی عطاء سمجھتے ہیں۔نفرت اور نظر انداز کرنا وہ عمل ہے جنہیں ایک لمحے میں مھسوس کیا جاسکتا ہے جبکہ محبت اور وفاداری وہ عمل ہیں جن کو ثابت کرنے میں پوری زندگی بیت جاتی ہے ۔انسان زندگی میں بہت کچھ سیکھتا ہے لیکن جب تک دوسروں سے پیار کرنا معاف کرنا اور دوسروں کی عزت کرنا نہیں سیکھ جاتا سمجھو کچھ نہیں سیکھتا۔گفتگو میں بے احتیاطی رشتوں کو کچل دیتی ہے ۔ آپکے الفاظ آپکا عکس ہوتے ہیں بعد میں وضاحتیں دینے سے کچھ حاصل نہیں ہوتا۔

Sharing is caring!

Categories

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *