”کھانے پینے کے بعد کھانے کے برتن چاٹنا“

حضرت عمربن ابی سلمہ رضی اللہ عنہا کا بیان ہے کہ حضورِ اکرم صلی اللہ علیہ وسلم نے مجھے ہدایت فرمائی کہ “بسم اللہ پڑھ کر دائیں ہاتھ سے کھانا کھاؤ اور اپنے سامنے سے کھاؤ.” (صحیح بخاری اور صحیح مسلم)

حضرت کعب بن مالک رضی اللہ عنہ کا بیان ہے کہ میں آپ صلی اللہ علیہ وسلم کو تین انگلیوں سے کھانا کھاتے دیکھا ہے. کھانے سے فارغ ہونے کے بعد ان انگلیوں کو آپ صلی اللہ علیہ وسلم چاٹ لیا کرتے تھے. (صحیح مسلم)

حضرت ابو ہریرہ رضی اللہ عنہ کا بیان ہے کہ حضور پرنور صلی اللہ علیہ وسلم نے کھانے میں کبھی کوئی عیب نہیں نکالا. خواہش ہوئی تو نوش فرما لیتے. رغبت نا ہوتی تو نوش نہ فرماتے. (صحیح بخاری اور صحیح مسلم)

حضرت انس بن مالک رضی اللہ عنہ فرماتے ہیں کہ حبیبِ خدا صلی اللہ علیہ وسلم کھانا تناول فرمانے کے بعد اپنی انگلیاں(دو انگلیاں اور ایک انگوٹھا) چاٹ لیتے تھے اور فرمایا کرتے کہ ” اگر تم سے کوئی لقمہ گر جائے تو اسے اُٹھالو اور اس پر لگی ریت اور مٹی وغیرہ صاف کرکے اسے کھالو اور اسے شیطان کیلئے نہ چھوڑو. (صحیح مسلم)

حضرت ابو جحیفہ بن عبد رضی اللہ عنہ کا بیان ہے کہ آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا: ” میں ٹیک لگا کر کھانا پسند نہیں کرتا.” (صحیح بخاری)

حضرت عبد اللہ بن عباس رضی اللہ عنہ سے ریوایت ہے کہ آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا: ” تم میں سے جب کو شخص کھانے کھائے تو اسے چاہیے کہ انگلیوں کو رومال سے صاف کرنے سے پہلے انہیں چاٹ لیا کرے.” (صحیح بخاری اور صحیح مسلم)

ام المؤمنین حضرت ام سلمٰی رضی اللہ عنہ کا بیان ہے کہ آپ صلی اللہ علیہ وسلم کا فرمان ہے: “جو شخص بھی سونے چاندی کے برتنوں میں کھاتا پیتا ہے وہ اپنے پیٹ میں آتشِ جہنم دہکا رہا ہے.” (صحیح بخاری اور صحیح مسلم)

حضرت عبد اللہ بن عباس رضی اللہ عنہ سے ریوات ہے کہ آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے برتن میں سانس لینے اور پھونک مارنے سے منع فرمایا ہے. (ترمذی)

حضرت جابر رضی اللہ عنہ ارشاد فرماتے ہیں کہ آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے انگیاں اور سالن چاٹنے کی ہدایت فرمائی ہے اور ارشاد فرمایا کہ ” تم نہیں‌ جانتے کہ کھانے کا کون سا جزو تمہارے لئے برکت والا ہے.” (صحیح مسلم)

حضرت ابو ہریرہ رضی اللہ عنہ سے ریوایت ہے کہ آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا: ” تم سے کوئی شخص ہر گز ہر گز کھڑے ہوکر پانی نہ پیئے اور اگر کسی نے بھول کر پی لیا ہو تو اسے چاہیے کہ وہ قے کر ڈالے.” (صحیح مسلم)

حضرت عبد اللہ بن عباس رضی اللہ عنہ کا بیان ہے کہ حبیبِ خدا صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا: “ایک ہی سانس میں مت پیا کرو. تین سانس میں پیا کرو. پینے لگو تو بسم اللہ پڑھ کر پیو اور فارغ ہونے کے بعد الحمداللہ کہو.” (ترمذی)

حضرت انس بن مالک رضی اللہ عنہ سے ریوایت ہے کہ آپ صلی اللہ علیہ وسلم کوئی مشروب پیتے وقت برتن سے منہ ہٹا کرتین مرتبہ سانس لے کر پیتے تھے. (صحیح مسلم)

Sharing is caring!

Categories

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *