گردے کی پتھر ی ایک ہفتے میں ختم، مثانہ کی گرمی ، ہاتھ پاؤں کی گرمی

گردوں میں پتھر ی کا بہت زیادہ مسئلہ ہورہا ہے۔ اگر پتھر ی کا سائز بڑھا ہوا ہو۔ تو وہ پھر مشکل نکلتی ہے۔ اس کو ٹائم لگ جاتا ہے۔ لیکن چھو ٹی چھوٹی پتھریاں ہیں یا ریت ہے۔ اور یورین آپ کو ج ل کر آرہا ہے۔ یورینپیلا آرہا ہے اور ساتھ میں ج۔ل۔ن ہورہی ہے۔ مثانے میں ج۔ل۔ن ہورہی ہے اور جب آپ یورین کرتے ہیں۔ تو یورین ج۔ل۔ن اور پیلا آرہا ہے۔ یہ چیزیں ایک ہفتے کے اندر ٹھیک ہوجائیں گی۔ یہ نسخہ انتہائی سادہ اور آسان ہے۔

اگر یہ نسخہ کسی پنساری کی دکان نہ ملے تو آپ خود بھی اس نسخے کے اجزاء کو ارینج کر سکتے ہیں۔ آپ نے تربو ز کے بیج لے لینے ہیں۔ آ پ کی جتنی مرضی مقدار لے لیں۔ چاہے آپ سو گرام لے لیں۔ یا چاہے آ پ بیس گرام لے لیں۔ اس کا مزاج سر د ہے ۔ اور یہ جسم کے اندر سے تمام گرمی کو ختم کرتے ہیں۔ جس میں معدے کی ، مثانےکی، جگر کی گرمی ختم کردے گا۔ جیسے آپ کے جسم میں اے ۔ سی لگ گیا ہو۔ آپ نے گردے کی پتھری اور جسم کی گرمی ختم کرنے کےلیے اس کو کیسے استعمال کرنا ہے؟ آپ نے دو چمچ تربوز کے بیج کے رات کو بھگو لینے ہیں۔

صبح کو اٹھ کر ان کو سردائی کی طرح یا کسی گ۔ری۔ن۔ڈ۔ر میں پیس لینا ہے۔ اس میں تھوڑا سا دودھ شامل کرکے اس کو پی لینا ہے۔ عموماً سردا ئی چارمغز ہوتے ہیں۔ صرف دو دن کے استعمال سے آپ کو ایسے لگے گاکہ آپ کے جسم کے اندر اے ۔ سی لگ گیا ہو۔ آپ کے پہلے ہی دن یورین کا پیلا پن ختم ہوجائےگا۔ یہ اس بات کی گ۔ارنٹی ہے۔ آپ کو اس بیس یا پ چ ی س دن پئیں یا مہینہ پی لیں اس میں کوئی پابند ی نہیں ہے۔ اگر آپ نے اس کے اندرچینی ڈال کر میٹھا کر سکتے ہیں ۔ لیکن اگر کوئی ش۔وگر کا مریض ہے تو وہ چینی کا استعمال نہ کرے۔ ا ب پتھر ی نکالنے کے لیے اس کو کیسے استعمال کرنا ہے۔

ایک لیٹر پانی میں اس مغز کے دو چمچ ڈال کر قہوہ بنا لینا ہے قہوہ بنانے کے لیے اس کو چولہے پر تیا رکریں۔ جب اچھی طرح ابل جائے تو اس کوچھان کر وہ پانی رکھ لینا ہے۔ وہ پانی ٹھنڈ ا کرکے کسی بوتل میں ڈال لیں۔ اور دن میں تھوڑے تھوڑے وقفے سے پیتے رہیں۔ یعنی جب پیاس لگے تو اس کو ایک گ۔ھونٹ یا دو گ۔ھونٹ پی لینا ہے۔ وہ ایک لیٹر پانی ایک دن میں ختم کردیں۔ اگلے دن پھر تازہ بنائیں ۔ ایک دن کا وقفہ دے دیں۔ پھر دو دن پئیں ۔ پھر ایک د ن کا وقفہ دے دیں۔ پھر دودن پئیں ۔ ایسےتازہ بنا کر پینا ہے۔ اس میں چینی یا کوئی ایسی چیز نہیں ملانی ہے۔ بس اس کو ایسے ہی پی لینا ہے۔

Sharing is caring!

Categories

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *