آنکھ کی گوہانجی (دانہ)کا حیرت انگیز علاج

آج آپ کو آنکھ پر بننے والا دانہ جسے پنجابی اور اردو میں گوہانجی بولتے ہیں۔ بہت ہی کارآمد اور آسان علاج ہے۔ جو اسے بننے سے پہلے ہی روک دیتا ہے۔ کچھ دن پہلے کسی کی آنکھ میں خارش ہوئی تو اس نے یہ نسخہ استعمال کیا اور اللہ تعالیٰ کے فضل وکرم سے آنکھ بالکل ٹھیک ہوگئی۔آپ اس نسخے کو ضرور استعمال کریں۔ سب لو گ یہی سمجھتے ہیں کہ اس کا علاج نہیں ہوتا یہ خود ہی ٹھیک ہوجاتی ہے۔ اتنا درد فل ہوتا ہے۔ اب آ پ کو آج کے نسخے کے بارے میں بتاتے ہیں۔

آپ نے کیا کرنا ہے۔ کہ اگرآنکھ پر خارش اور ہلکاسا دانہ محسوس ہوتو تھوڑے سے لونگ لیں۔ اس کا گول حصہ اتار لیں۔ اور اچھی طرح پیس کر پاؤڈر بنا لیں۔ اور رکھ لیں۔ اب آپ نے آنکھ کے دانے پر سرسوں کا تیل لگانا ہے۔ اور اس پر پسے ہوئے لونگ کاپاؤڈر چپکا دیں۔ سار ی رات کےلیے لگا رہنے دیں۔ اور صبح کے وقت بھی لگائیں۔ ایک سے دو دن میں آپ حیران ہوجائیں گے۔ کہ دانہ وہیں ختم ہوگیا ہے۔ یہ عمل باقاعدگی سے کریں۔ یہ عمل صبح اور رات سار ا دن بھی لگا رہنے دینے سے جلدی ٹھیک ہوجائےگا۔ لگانے سے اگر تھوڑا پاؤڈر آنکھ میں لگ جائے توجلن ہوتی ہے۔ ہلدی ایک قدرتی انٹی بائیوٹک ہے ایک چائے کا چمچ ہلدی کو دو کپ پانی میں ڈال کے اتنا ابالیں کے پانی آدھا رہ جائے

اس محلول کو بریک کپڑے سے چھان لیں اور ٹھنڈا ہونے پرآئی ڈراپر کے ساتھ دن میں تین بار آنکھوں میں ڈالیں ۔ ایک چائے کے چمچ دھنیے کے بیج کو ایک کپ پانی میں ڈال کے ابالیں پانی کو ٹھنڈا کر لیں چوبیس گھنٹے میں تین بار اس پانی سے آنکھ کو دھویں۔ ٹی بیگز کو گرم پانی میں ڈالیں پھر اسے ٹھنڈا ہونے دیں اور آنکھ پر لگیں دانہ ٹھیک ہو جائے گا۔ آنکھ کے دانے کے لئے ایلوویرا کا پتا انتہائی مفید چیز ہے۔ایلوویرا کو کاٹ کر اس کے مادے کو آنکھ میں دانے والی جگہ پر لگائیں جلد اپنی مشکل سے نجات پائیں۔ کسی صاف کپڑے کو گرم پانی میں بھگو کر اسے اپنی آنکھ پر دانے والی حصے پر لگائیں۔ اس بات کا خیال رہے کہ پانی بہت زیادہ گرم نہ ہو۔گرم پٹی کو 5 سے10 منٹ تک آنکھ پر لگا رہنے دیں، اس کی وجہ سے نہ صرف آپ کا دانہ جلد ٹھیک ہوجائے گا بلکہ آپ کو وقتی سکون بھی ملے گا۔ ایک آلو کو اچھی طرح دھونے کے بعد باریک کاٹ لیں اسے کسی باریک کپڑے میں ڈالیں اور کپڑے کو آنکھ پر چند منٹ تک لگائیں۔اس کے بعد آنکھ کو نیم گرم پانی سے دھولیں یہ عمل دن میں دو سے تین بار کریں۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.